قربانی میں ولیمہ یا عقیقہ کا حصہ رکھنا؟ قربانی میں اللہ کا حصہ رکھنا؟

قربانی میں ولیمہ یا عقیقہ کا حصہ رکھنا؟
قربانی میں اللہ کا حصہ رکھن؟

آج کا سوال نمبر ۲۱۵۶

الف، قربانی میں ولیمہ یا عقیقہ کا حصہ رکھ سکتے ہیں؟

ب، بعض لوگ قربانی میں اللہ کا حصہ رکھنے کو کہتے ہیں تو یہ کیسا ہے؟

جواب

حامدا مصلیا و مسلما

الف، جی ہاں ولیمہ سنت ہے ثواب ہے اس کا حصہ رکھ سکتے ہیں اسی طرح عقیقہ کا حصہ بھی رکھ سکتے ہیں۔

مستفاد از کتاب المسائل۲/۲۳۳

ب، بعض لوگ بڑے جانور میں اللہ کا حصہ رکھنے کے متعلق پوچھتے ہیں تو یہ بات یاد رہے کہ تمام حصے اور تمام قربانیاں اللہ تعالی کے لیے ہی ہوتی ہیں عرف میں میرا حصہ فلاں کے نام کا جانور بول دیا جاتا ہے حقیقت میں نیت یہ ہونی چاہیے کہ فلاں کی طرف سے حصہ یا قربانی اللہ تعالی کے لیے میں ذبح کرتا ہو

واللہ اعلم بالصواب

مفتی عمران اسماعیل میمن حنفی

استاذ دارالعلوم رامپورہ سورت گجرات ہند

 کیلنڈر

۶۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ذی الحجہ

۱۴۴۱۔۔۔۔۔۔۔۔۔ہجری

Leave a Reply